14

ماہرین نے بھارت کے جوہری منصبووں پر کام بند کر دیا

نئی دہلی: بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیلی کے جوہری ماہرین نے بھارت کے جوہری منصوبے تارا پور فیز تھری پر کام روک دیا ہے، تارا پور ایٹمی منصوبے پر تین سو ایٹمی ماہرین کام کر رہے ہیں، کام روکنے کی وجہ ماہرین کے کام بے وجہ دخل اندازی بتائی گئی ہے۔ اسرائیلی ایٹمی ماہرین نے اپنے کام بند کرنے کے حوالےسے اپنے ملک کو اگاہ کردیا ہے، معلوم ہواہے کہ بھارتی حکام کی اسرائیلی ایٹمی ماہرین کے کام بند کرنے سے دوڑیں لگ گئی ہیں۔بھارتی حکام نے اس حوالے سے تارا پور جاکر اسرائیلی حکام سے بات چیت کی ، تاہم اسرائیلی ایٹمی ماہرین نے کام کرنے سے منع کردیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ اسرائیل اور بھارت کے درمیان ایٹمی معاہدوں سے کئی برس سے آپس کے تعلقات بہت اچھے چل رہے تھے۔گزشتہ روز ایک معمولی واقعہ کی وجہ سے اسرائیلی ماہرین نے اپنا کام اس وقت بند کیاجب تارا پور کے ایک سینئر سائنس دان ڈاکٹر اشوک دیر سنگ نے اسرائیلی حکام کے ساتھ شراب کے نشے میں غلط باتیں کیں۔ اسرائیلی ماہرین نے اس کا سخت نوٹس لیا ہے جس پر تارا پور ایٹمی پروجیکٹ کے حکام نے اسرائیلی حکام سے معافی مانگی ہےتاہم معاملہ ابھی ختم نہیں ہوا ہے۔

کیٹاگری میں : سائنس و ٹیکنالوجی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں